اوتھل :آئین کی بالادستی، خود مختار پارلیمنٹ اور خوشحال ومستحکم پاکستان کیلئے جدوجہد فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے: جمعیت علماء اسلام

درجن بھر وزراء اور چند زرد صحافت کے حامل چینلز کی جانب سے جمعیت علماء اسلام کا میڈیا ٹرائل دراصل حکومت کی دیمک زدہ چھت کو بچانے کی آخری کوشش ہے

3 111

اوتھل :آئین کی بالادستی، خود مختار پارلیمنٹ اور خوشحال ومستحکم پاکستان کیلئے جدوجہد فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے: جمعیت علماء اسلام

(کوئٹہ (ویب ڈیسک

اوتھل (نامہ نگار ڈیلی صحافت کوئٹہ )درجن بھر وزراء اور چند زرد صحافت کے حامل چینلز کی جانب سے جمعیت علماء اسلام کا میڈیا ٹرائل دراصل حکومت کی دیمک زدہ چھت کو بچانے کی آخری کوشش ہے، آئین کی بالادستی، خود مختار پارلیمنٹ اور خوشحال ومستحکم پاکستان کیلئے جدوجہد فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے ،یہ بات اظہر من الشمس ہے

کہ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے عوام نے جعلی سلیکٹڈ حکومت سےنجات حاصل کرنےکااٹل فیصلہ کرلیا ہے ان خیالات کااظہارجمعیت علمإ اسلام پاکستان کےمرکزی سرپرستی مولانا قمرالدین نے اسلام آباد میں جمعیت علمإ اسلام کےمرکزی مجلس عاملہ کےاجلاس میں شرکت کے لئےخضدار سےاسلام آبادجاتے ہوئے جامعہ مدنیہ اوتھل آمد پرکارکنوں سےگفتگوکرتےہوئےکیااسموقع پرجمعیت علمإاسلام ضلع لسبیلہ کےنائب امیر مولانا عبدالحمیدعارف جمعیت علمإاسلام ضلع لسبیلہ کے ڈپٹی سیکٹری اطلاعات حافظ حسین احمدمدنی مولانامحمودالحسن مولانا محمدرفیق عمرانی ودیگرموجودتھے

حکومت کی دیمک زدہ چھت کو بچانے کی آخری کوشش ہے

کیا انہوں نےکہاہیکہ کہ درجن بھر وزراء اور چند زرد صحافت کے حامل چینلز کی جانب سے جمعیت علماء اسلام کا میڈیا ٹرائل دراصل حکومت کی دیمک زدہ چھت کو بچانے کی آخری کوشش ہے آئین کی بالادستی، خود مختار پارلیمنٹ اور خوشحال اور مستحکم پاکستان کیلئے جدوجہد فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوچکی ہے اور یہ بات اظہر من الشمس ہے

کہ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے عوام نے نجات کااٹل فیصلہ کرلیا ہے کرنے والے عناصر کو ندامت کے سوا کچھ نہیں ملے گا جمعیت پر کارکنوں اور عوام کا مظبوط اور غیر متزلزل اعتماد کی بدولت ہر قسم کی سازشیں ناکام ہوکر رہیں گی انہوں نے کہا کہ جمعیت علماء اسلام اپنے دستور و منشور پر کاربندرہتے ہوئے نظم ونسق کے متعلق شان دار تاریخ کی حامل جماعت ہےحالات اور واقعات کی روشنی میں فیصلے ان کا اندرونی معاملہ ہے

جس پر وزراء اور ریاستی مشینری کی جانب میڈیا کے ذریعے طوفان بدتمیزی برپا کرنے کی کیا ضرورت ہے وہ اس خام خیالی اور کج فہمی میں نہ رہے کہ اس قسم کے اوچھے ہتھکنڈوں اور منفی پروپیگنڈوں کے ذریعے عوام کو ان کی عقیدت سے دور رکھا جاسکے یہ سلسلہ آج کا نہیں ہر دور میں جمعیت علماء اسلام کو کمزور کرنے کے حربے استعمال ہوئے مگر جمعیت کے شاہین صفت اور نظریہ لیس کارکنوں نے ناکام بناکر دشمن کو منہ توڑ جواب دیا ہے

یہی ہماری جماعت کا امتیاز وافتخار ہے کہ کارکنوں نے مادیات شخصیات کی بجائے نظریات کو فروغ دینے میں ہرقسم کے کڑوے گھونٹ پینے سے گریز نہیں کیا انہوں نے کہا جمعیت علماء اسلام نے جذبات سے ہٹ کر ہمیشہ زمینی حقائق کی روشنی میں قوم کی رہنمائی کو فریضہ سمجھ کر صفاف شفاف سیاست کی ہے جس طرح روز اول سے قوم کو آگاہ کیا تھا کہ موجودہ حکومت یہودیوں اور قادیانیوں سے معاہدات کے نتیجے میں قائم کی گئی ہے اور مذموم مقاصد کی تکمیل پرکام شروع ہوچکا ہے جس میں اسرائیل کو تسلیم کرنا بھی شامل ہے

You might also like
3 Comments
  1. […] کے مرکزی جنرل سیکرٹری سنیٹر مولانا عبدالغفور حیدری سے جمعیت علماء اسلام کے رھنماء مولانا مفتی محمد قاسم حقانی مولانا محمد طاہر […]

  2. […] (ویب ڈیسک)جمعیت علماء اسلام نظریاتی بلوچستان کے صوبائی امیر مولناعبدالقادرلونی […]

  3. […] جمعیت علماء اسلام نظریاتی پاکستان کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری مولنا محمودالحسن قاسمی تراویح میں ختم قرآن تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رسول اللہ ﷺ اوراصحاب محمدؐکی گستاخی ناقابل معافی جرم ہے ناموس رسالت اور ناموس صحابہ دو ارب مسلمانوں کا مشن ہے اور حرمت رسول کے دفاع کے لئے مسلمانوں کی نظروں میں حرمت رسول کی حفاظت سے بڑھ کر اور کسی چیز اہمیت نہیں ہونی چاہئے ناموس رسالت کے دفاع کے لیےایک نہیں ہزاروں ،لاکھوں،کروڑوں اربوں مسلمان غازی علم دین شہید عامر چیمہ ،ممتازقادری ،خالد، بن کر میدان میں نکل جائینگے انہوں نے کہا کہ یورپی یونین کی توہین رسالت پر سزائے موت کے خلاف قرار دادوں ہم قدم کی نوک پر رکھتے ہیں ناموس رسالت کی قانون سزائے موت پر امت مسلمہ کھبی سمجھوتہ نہیں کرینگے انہوں نے کہا کہ مسلسل گستاخیوں سے ملک میں آگ بھڑکانے کی منظم سازش کا حصہ ہے اگر رسول اللہ ﷺ اور صحابہ رضوان علیہم اجمعین کی شان میں گستاخی نہ روک دیں تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ رسول اللہ ﷺ اور صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین، امہات المومنین، اہل بیت عظام ؓاور خلفائے راشدینؓ کے خلاف ہرزہ سرائی کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین، امہات المومنین، اہل بیت عظام ؓاور خلفائے راشدینؓ کا احترام تمام مکاتب فکر کے علماء کے نزدیک مسلّم ہے ﷲتعالیٰ نے صحابہ کو ایمان کا معیارقرار دیاگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے ہر قسم کے سیاسی اختلافات سے بالاتر ہوکر میدان میں نکل جائے تحفظ ناموس رسالت ﷺ کیلئے تو قدم قدم پر جان کی بازی کی فدا کاری کو شعار بنایا جائے  ۔ انہوں نے کہا کہ مولانا محمد علی جوہر کی ایمانی غیرت و حمیت کے الفاظ ہر مسلمان کے جذبات کی ترجمانی کرتے ہیں ناموس رسالت کی تحفظ کے لیے نہ قانون کی ضرورت ہے، نہ عدالتوں کی حاجت۔ تاریخ گواہ ہے کہ گستاخ رسول ﷺکو مسلمان نے معاف نہیں کیا گستاخ رسولﷺکے لیے اسلام نے چودہ سو سال پہلے قتل کاسزا مقرر کیا انہوں نے کہا کہ پیغمبر اسلام ﷺاور اسلام کے خلاف پروپیگنڈہ کفری قوتوں کی متعصبانہ خمیر میں شامل ہے اور اس کے لئے انہوں نے بڑے بڑے ادارے قائم کئے شعائراسلام کے قلعے اورمقدس شخصیات پر مختلف محاذوں سے حملہ آور ہیں، وہ چاہتے ہیں کہ اس قلعے میں شگاف پڑے، انہیں معلوم ہے کہ دین اسلام ہی ان کی کھوکھلی اور فرسودہ تہذیب کو کارزار حیات میں شکست و ریخت سے دو چار کرکے مٹاسکتا ہے کہ وہی ایک زندہ جاوید اور قیامت تک رہنے والا دین برحق ہے […]

Leave A Reply

Your email address will not be published.