صوبے میں زبانوں کی ترقی و ترویج و اعلیٰ تعلیم کے حصو ل کویقینی بنایا جائے گا ،میر ضیاء اللہ لانگو

0 1

کوئٹہ( این این آئی)صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا ہے کہ کلچر ڈے صرف لباس اور ثقافتی چیزوں تک محدود نہیں اس میں ہماری روایات شامل ہیں بلوچ کلچر ڈے منانے کا مقصد بلوچی روایات، ثقافت کو اجاگر کرنا ہے ا ور ان روایات کو نئی نسل اور خصوصاً نوجوانوں میں ابھارنا ہے ا ن خیالات کا اظہار صوبائی وزیر داخلہ نے قلات میں ڈپٹی کمشنر کے آفس میں بلوچ کلچر ڈے کے حوالے سے رنگ رنگ تقر یب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ثقافت صرف زندہ قوموں میں زندہ رہتی ہے بلوچستان ایک گلدستے کی مانند ہے جس میں مختلف اقوام کی خوبصورت رنگیں موجود ہیں جو امن محبت یکجہتی اور بھائی چارگی کو فروغ دیتے ہیں۔صوبے میں زبانوں کی ترقی و ترویج و اعلیٰ تعلیم کے حصو ل کویقینی بنایا جائے گا کوشش ہے کہ صوبے بھر میں اپنی ثقافت اور رسم ورواج کے حوالے سے لوگوں میں مزید شعور اجاگر کریں زندہ قومیں ہی اپنی ثقافت اور رسم ورواج کا پرچار کرتی ہیں جو قومیں اپنی ثقافت اور رسم ورواج کو بھول جاتی ہے وہ ترقی نہیں کرسکتی اس لئے ہمیں  نوجوان نسل کو اپنی ثقافت رسم ورواج  کی آگاہی کیلئے پروگرام منعقد کرنے چاہیے صوبہ بلوچستان پاکستان کا اہم ترین صوبہ ہے اور اپنے اندر ہزاروں سال پرانی تہذیب و تمدن کو سموے ہوئے ہے قلات کی تاریخ اس بات کا گواہ ہے تمام زبانیں پاکستان کے اندر بہت اہمیت کا حامل ہے لیکن بلوچی تاریخ اپنے اندر کئی واقعا ت چھپا رکھتی ہیں۔ ہر سال دو مارچ کو یکجا ہو کر بلوچ کلچر ڈے جو ش وخروش سے منا کریہ ثابت ہوتا ہے کہ ہم ایک زندہ قوم ہے۔ بلوچستان میں بسنے والی تمام اقوام سے تعلق رکھنے والے ہمارے اپنے بھائی ہیں جنہوں نے بلوچستان کی ترقی و خوشحالی میں اپنا کردار ادا کیا ہے تاریخ گواہ ہے کہ بلوچ قوم بہادر اور محب و طن قوم ہے اور اس تاریخ کو بلوچ قوم نے آج بھی زندہ رکھا ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.