مسلم باغ پولٹی فارم بنتےہی کرپشن کی نظر

0 16

تحصیل مسلم باغ ضلع قلعہ سیف اللہ میں ولڈبینک کی مدد سےBLEF این جی او نے سیول وٹرنری ہسپتال میں موجود بوسیدہ فارم کو اپڈکریڈ او نئے فارم کی منظوری دیے دی جو کہ 7 کروڑ کا پروجیکٹ تھا مگر بدقسمتی سے ناہل حکمرانوں اور کرپٹ افسران کی ملی بھگت سے اس پروجیکٹ کو شروع کرنے سے پہلے ہی کرپشن کا بازار گرم ہوا، ٹیھکدار نے محکمے کو حوالا کرنے سے پہلے ہی ڈاکٹر عارف اور افسران کو اعتماد میں لے کر کام پورا نہیں کیا، اور فارم کو مفلوج حالات میں ہی شروع کروایا اور انڈوں کی فروخت کو علاقے کے لیے نہیں بلکہ کاروبار کے لیے استعمال کرنا شروع کیا، اور انڈوں کی مد میں کروڑوں روپے کی خورد بورد کی گئی جس میں ڈاکٹر عارف اور اعلی افسران کی لاپروائی اور مرضی سے لوکل ڈیلر کے ذریعے کاروبار شروع کیا جس کا نفع عوام کے بجائے ڈاکٹر اور افسران کو مل رہی ہیں، جب فولٹی فارم سپرڈنٹ سے وضاحت طلب کی تو سپرڈنٹ نے سارا ملبہ ٹیھکدار اور اپنے افسران پر ڈالا انڈوں کی فروخت بغیر نرخ نامے اور من مانی قیمتوں پر ہونے لگی جسے عوام کو کوئی فائدہ نہیں پہنچا یاجا سکتا یہ کہ فولٹی فارم کا مکمل سٹاف جن میں 5 ڈاکٹرز سٹاف وغیرہ، ہر وقت غیر حاضر پایا گیا ہے،کیونکہ پرائیویٹ 3بندوں کو فارم اور انڈوں کی خرید فروخت سومپ دی گئی ہے ،مزامت کرنے پر سی وی ایچ کے سٹاف کو مداخلت کی مد میں روکا گیا، اور الزامات لگائے گئے، کہ عوام میڈیا اور لوکل سٹاف فارم کو چلانے نہیں دیے رہے ہیں، الزامات میں کسی کو قریب سے جائزہ لینے بغیر عرصہ چار ماں سے بغیر بینک یا کوئی سرکاری ریکارڈ کے خرید اور فروخت کرنے لگے، تحقیقات کا ڈرامہ رچا کر فارم کو مفلوج کیا جا رہا ہے مگر ابھی تک سیکٹری لئیو سٹاک نے آج تک کوئی شفاف تحقیقات نہیں کی، اور عوام کو کوئی سولیت نہیں ملی، اسسٹنٹ کمیشنر قلعہ سیف اللہ ڈاکٹر یاصر،سیکٹری لئیو سٹاک، چیف سیکٹری، ایم پی اے قلعہ سیف اللہ، اور وزیراعلٰی بلوچستان سے اس تمام پروجیکٹ کی ازاثر نو اینکو آئری اور نوٹس لینے کی مطالبہ کرتے ہیں اور خاص کر چیف جسٹس بلوچستان سے سوموٹو نوٹس کا اینکو ائری کا مطالبہ کرتے ہیں،

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.