بی این پی کے رہنماوں نے پہلا استعفی پیش کرکے اختر مینگل کے بیانیے پرمہر ثبت کردی، عبدالواحد بلیدی

0 60

(ویب ڈیسک)
بی این پی کے رہنما عبدالواحد بلیدی نے پی ڈی ایم کے حالیہ اجلاس کے فیصلوں اور پارٹی کے مرکزی قیادت کے کال پر بی این پی کے پارلیمانی رہنماوں نے لبیک کہتے ہوئے اپنا پہلا استعفی پیش کرکے نہ صرف اپنے اصولوں اور پارٹی قائد سردار اختر جان مینگل کے بیانیے پر مہر تصدیق ثبت کردی ہے

بلکہ بی این پی نے اپنے ماضی کے اصولی سیاست اور نظریاتی فکر و سوچ کو ایک دفعہ پھر دھرایا ہے کیونکہ ماضی میں جب بلوچستان کے قدآور بلوچ رہنما نواب اکبر خان بگٹی کو تراتانی کے پہاڑوں میں شہید کیا گیا

تو سب سے پہلے بی این پی نے نہ صرف اس بلوچ کش وحشیانہ اقدام کے خلاف جرآت اور بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسمبلیوں سے فورا استعفی دیدئے بلکہ اس ظلم و زیادتیوں کے خلاف بی این پی کے قائد سردار اختر جان مینگل سے لیکر بلوچستان کے کونے کونے تک پارٹی کے مرکزی قیادت اور سیاسی و نظریاتی کارکنان ھزارون کے حساب سے جیلوں میں ٹھونس کر اذیتیں دی گئیں

لیکن بی این پی کے رہنماوں اور کارکنوں کے پاوں تک لغزش نہیں آئی اور دوسرے طرف بلوچ قوم اور بلوچستانی عوام نے دیکھا کہ چند ایک پارٹیوں نے ایک دو دن میں مگر مچھ کے آنسو بہاکر ایسے چھپ سادھ لی تھی کہ جیسے بلوچستان میں کچھ ہوا ہی نہیں ہے

ان پارٹیوں نے قومی و صوبائی اسمبلیوں سے استعفی دینا تو دور کی بات ایک معمولی کونسلری سے بھی استعفی دینا ان کیلئے گران بار تھا لیکن بی این پی نے ماضی کو ایک دفعہ پھر دھرایا ہے

اور اپنے اصولوں پر کاربند رہتے ہوئے پی ڈی ایم کے تحریک میں پیش پیش ہوکر اپنے عوام کے شانہ بشانہ کھڑے ھوکر جوان مردی سے آگے بڑھ رہی ہے اقتدار اور کرسی کو ثانوی حیثیت دی ہے

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.