18ویں ترمیم میں صوبوں کے ساتھ فراڈ کیا جارہا ہے ،نواب اسلم رئیسانی

0 12

کوئٹہ(ویب ڈیسک)سابق وزیراعلی بلوچستان چیف آف ساراوان نواب محمد اسلم رئیسانی نے کہا ہے کہ فیڈریشن کے استحکام کے لئے اکائیوں کے حقوق دینا ہونگے جمہوری استحکام اور آئین کی بالادستی کنٹرول لوگوں سے ممکن نہیں ریاست مدینہ کی بات کرنے والے مسٹر عمران کے اعلانات اور عملی اقدامات میں تضاد پایا جارہا ہے
18ویں ترمیم میں صوبوں کے ساتھ فراڈ کیا جارہا ہے بلوچستان کے وسائل سے صوبے کو مستفید ہونے کے لئے مستحکم پالیسیوں کی اشد ضرورت ہے باپ کی آنکھیں گردے کان اور جگر خراب ہو چکے ہیں مرہم پٹی کرنے کے لئے ہم تیار ہیں وزیراعلی کے لئے اپوزیشن جماعتوں کی حمایت کریں گے اگر مجھ پر ذمہ داری عائد کی گئی تو قریبی حلقوں سے مشاورت کرونگا
نواب محمد اسلم رئیسانی نے کہاکہ قومی وحدتوں کو زیادہ اختیارات دینے چاہیے یہاں مختلف اقوام رہ رہے ہیں جن کی مختلف زبان،مختلف تاریخ الگ کلچر ہے یعنی یہ ملٹی نیشنل اسٹیٹ ہے اگر آپ اس کو ایک اسٹیٹ کہیں اور جن اقوام کی تاریخ 6یا سات ہزار پرانی ہے تو وہ 12یا 13دن کیلئے اپنی تاریخ نہیں بھلائے گا،
انہوں نے کہاکہ میں سمجھتاہوں کہ پاکستان کے آئینی ڈھانچے میں تبدیلی ناگزیر ہو چکی ہے اس سے قبل بھی ایوب خان کے بعد 73 کا آئین آیا اور پھر 18 ویں ترمیم لائی گئی جس کی ہم مکمل حمایت تو کرتے ہیں تاہم میں اسے میں ” اندھوں میں کانا راجا ”تصور کرتا ہوں کیونکہ آج بھی 18 ویں ترمیم کے ثمرات سے صوبے مکمل طورپر مستفید نہیں ہورہے

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.