کوئٹہ ایڈز کے حوالے سے ہائی رسک قرار، اعلی تعلیمی ادارے کے طلبہ بھی مبتلا

0 58

کوئٹہ میں اعلیٰ تعلیمی ادارے کے بعض طلبا کا ایڈز میں مبتلا ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔غیر سرکاری تنظیم ہارڈ بلوچستان نے ایڈز کے حوالے سے سروے کیا جب کہ سروے کے دوران ایک اعلیٰ تعلیمی ادارے سمیت شہر کے مختلف علاقوں سے ایڈز کے سیمپل لیے گئے۔غیر سرکاری تنظیم نے انکشاف کیا ہے کہ صوبے کے ایک اعلیٰ تعلیمی ادارے کے بعض طلبا ایڈز میں مبتلا ہیں، ابتدائی طور پر ایڈز پازیٹیو آنے والے لوگوں کے مزید ٹیسٹ اسپتال میں کروائے جاتے ہیں۔دوسری جانب بلوچستان ایڈز کنٹرول پروگرام نے صوبائی دارلحکومت کو ایڈز کے حوالے سے ہائی رسک علاقہ قرار دیا ہے۔بلوچستان ایڈز کنٹرول پروگرام کے مطابق صوبے میں ایڈز کی کیسز کی تعداد 7 ہزار ہوسکتی ہے جب کہ بلوچستان میں ایڈز کے رجسٹرڈ کیسز کی تعداد 2 ہزار 5 سو سے زائد ہے۔ایڈز کنٹرول پروگرام کا کہنا ہے کہ کوئٹہ میں ایڈز کے مریضوں کی تعداد 2100 کے قریب ہے، ایڈز کے زیر علاج مریضوں کی تعداد 1500 سے زائد ہے جب کہ ایک سال کے دوران ایڈز سے 500 کے قریب لوگ انتقال کرگئے۔خیال رہے کہ ایڈز کنٹرول پروگرام نے پہلی ہی ایڈز کی روک تھام کے حوالے سے اقدامات پر زور دیا تھا جب کہ ایڈز کے پھیلاؤ کی بڑی وجہ نائی کی دکانیں، سرجیکل آلات کی عدم صفائی ہے۔علاوہ ازیں غیر محفوظ جنسی تعلقات بھی ایڈز کے پھیلاؤ کی ایک بڑی وجہ ہے، منشیات کے عادی افراد کا بھی ایڈز پھیلانے میں اہم کردار ہے کیونکہ منشیات کے عادی افراد کا انجیکشن درجنوں لوگ استعمال کرتے ہیں۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.