گوادر شہر میں میں فوری نوعیت کے منصوبوں پر جلد عملدرآمد کی جائے، ادارہ ترقیات گوادر

0 8

گوادر (خ ن)ادارہ ترقیات گوادر کے زیر اہتمام گوادر اولڈ سٹی اور سیوریج نظام کی بہتری سے متعلق منعقدہ پبلک ہیرنگ اجلاس سے مختلف شعبے سے وابستہ افراد اپنے رائے کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ گوادر شہر میں میں فوری نوعیت کے منصوبوں پر جلد عملدرآمد کی جائے گوادر سید ہاشمی ایونیو جاوید کمپلکس تا ملا فاضل چوک کا منصوبہ گزشتہ کئی برسوں سے تعطل کا شکار ہے۔ یہ سڑک شہر کے وسط میں واقع ہے اور یہ سڑک تجارتی حب کا بھی حامل ہے لیکن منصوبہ

 

تعطل کا شکار ہے۔ سڑک کی تکمیل سے نہ صرف گوادر شہر کی خوبصورتی میں اضافہ ہوگا بلکہ اس سے پرانی آبادی کی بحالی بھی وابستہ ہے۔ جی ڈی اے اس منصوبے کی تکمیل کے لئے اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لے اور منصوبے کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے حالیہ بارشوں کی وجہ سے نکاسی آب کا مسئلہ تشویشناک رہا ہے۔ شہر کے گنجان آبادی والے علاقے متاثر ہوگئے۔ جی ڈی اے سیوریج لائن کا منصوبہ ہنگامی بنیادوں پر مکمل کرے اور جن علاقوں میں سیوریج لائن کا منصوبہ نہیں پھیلایا گیا ہے وہاں پر بھی اس کو وسعت دی جائے۔ماضی میں شہر کی نکاسی آب کا دباو¿ مشرق کی طرف تھا لیکن اب ایکسپریس وے کی تعمیر کے بعد نکاسی آب کا رستہ بند ہوگیا ہے۔ جی ڈی اے متوازی نکاسی آب پر اگر کام کررہا ہے تو اس کے لئے کیا میکنزم بنایا گیا ہے اور کونسی مہارتیں استعمال کی جائینگی اس حوالے سے پائیدار منصوبہ بندی کی جائے۔ شہر کے مختلف مقامات پر نکاسی آب اور سیوریج کے پانی کو نکالنے کے لئے پمپنگ اسٹیشن بنائیں جائیں۔ اس کا دائرہ بخشی کالونی۔ ٹی سی کالونی شمبے سماعیل تک پھیلایا جائے۔ شاہی بازار کی گلیوں کی تزئین و آرائش کے منصوبے کو حتمی شکل دی جائ

 

ے۔ثقافتی ورثہ کے تحفظ کے لئے گوادر تار آفس (ٹیلیگراف آفس)، چارپادگو اور دیگر تاریخی مقامات کی تعمیر نو کی جائے۔گوادر کے مشرقی ساحل پر گندے پانی کے نکاس کے لئے منصوبہ بندی کی جائے۔مقامی کشتی سازی کہ صنعت کو رواں رکھنے کے لئے پائیدار منصوبہ بندی کی جائے اور اس شعبہ سے وابستہ افراد کو جدید سہولیات فراہم کی جائیں۔گوادر شہر کی تمام گلیاں اور رابطہ سڑکیں پختہ کئے جائیں اور اس میں نکاسی آب کو ممکن بنایا گوادر۔ شمبے سماعیل فقیر کالونی میں اکثر اوقات میں پانی کی سپلائی میں مشکلات پیش آرہا ہے۔اسکی مین وجہ دونوں علاقوں میں پمپنگ اسٹیشن نہ ہونے کی وجہ سے پانی کی پریشر بہت کم ہوجاتا ہے۔ محکمہ پبلک ہیلتھ کے ساتھ ملکر اس اہم مسلہ کو حل کیا جائے۔جی ڈی اے ڈی سی آفیس کے پاس پارک بنا رہے ہیں۔ پار ک کا کام مکمل ہونےکے قریب ہے اس پارک کو صرف خواتین کو اجازت ہو گاگوادر اسپورٹس کمپلیکس خالی کمرشل اراضیات کو بلدیہ گوادر کے نام الاٹ کیا جائے تاکہ ان اراضیات پر بلدیہ گوادر شاپنگ پلازہ بنانے۔ شاپنگ پلازہ کی آمدنی بلدیہ گوادر شہر میں ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کرئے اور صفائی کے نظام کو بہتر بنانے سے

 

کمرشل پٹی کو بااثر لوگوں کے نام پر لیز ہونے سے بچایا جائے۔ گوادر کے تعلیم اداروں میں اکثر اسکول میں تعداد میں اضافہ ہونے کی وجہ کمرے نہ ہونے سے طلباء کو داخلہ ملنے میں دشواری پیش آرہی ہے۔ اس پر توجہ دینے کی ضرورت گوادر شہر کے بجلی نظام کو بہتر بنانے کےلئے گوادر کے 30 سال پرانے تمام تاروں کمبوں کو تبدیل کرکے نئے کمبے لگائے جائیں۔ تاکہ گرمیوں کے موسم میں بجلی کا نظام درہم برہم نہ گوادر شہر کے باقی تمام وارڈ جہاں گیس پائپ لائن نہیں بچھایا گیا ہے۔ گیس پائپ لائن بچھاء منصوبہ کے لئے سوئی گیس کمپنی کے ساتھ رابطہ کرکے باقی وارڈ کو گیس کے فراہمی کے اقدامات کیا جائے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.