دین،اسلام،شریعت،خانقاہ،مدرسہ اورسیاست لازم وملزوم ہے، مفتی عبدالصمدساعد

0 86

دین،اسلام،شریعت،خانقاہ،مدرسہ اورسیاست لازم وملزوم ہے، مفتی عبدالصمدساعد

ہرنائی(نامہ نگار) جمعیت علماء اسلام کے رکن صوبائی جنرل کونسل وڈپٹی پریس سیکرٹری جےیوآئی مفتی عبدالصمدساعدنے پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کی جانب سے قائدجمعیت حضرت مولانافضل الرحمن اورجمعیت علماء اسلام کےخلاف نازیباقسم کے لفاظی کے شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاکہ دین،اسلام شریعت،خانقاہیں،مدرسہ اوردیگردینی مراکزاورسیاست لازم وملزوم ہیں،احادیث اوراقوال فقہاء کی روشنی میں ہمارے نبی سیاستی تھے خلفاء راشیدین سیاسی تھے 1858 کی جنگ آزادی

 

میں جس مولوی نے مدرسے کی بنیادرکھی اسی مدرسے کے پہلے طالب علم نے جمعیت علماء اسلام کی بنیادرکھی،لہذامدرسہ اورسیاست ایک دوسرے لگ نہیں ہوسکتے ایسی باتیں کرنے والے کچھ تاریخ کابھی مطالعہ کریں،انہوں نے کہاکہ اسلام آبادبھی کسی کے باپ کی جاگیرنہیں ہم اسلام کی جنگ لڑیں یااسلام آباد کی کسی کوہمارے کام ٹانگیں اڑانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی،پاکستان جتناسیکولرجماعتوں کا اس سے

 

دوگناعلماء کرام ہےکیونکہ پاکستان کاسنگ بنیادرکھنے والامولوی مولاناشبیراحمدعثمانیؒ
جمعیت علماء اسلام کے صدرتھے،انہوں نے کہاہمیں مدارس کے بچوں کی طعنے دینے والے ذرا”ٹیریان”بچی کی بھی خبرلے لیں جوعمران خان کے دورکرکٹ سے لیکرآج تک اپنے والد کی تلاش میں لاس اینجلس کی عدالتوں میں بے یارومددگارپھررہی ہے،ایسے ہی انہوں نے مزیدکہا126 دن قوم کی

 

بچیوں کوسرعام نچوانے والے کس منہ سے مدارس کی بات کرتے ہیں،”ملاکی دوڑمسجدتک”کافلسفہ ختم ہواچاہتاہے اب مولوی کاممبرومحراب سمیت حکومت واقتدارکی کرسیوں پربراجماں ہونے کاوقت ہواچاہتاہے،مولانافضل الرحمن مضبوط موقف وحکمت عملی ہی ہے جس نے آج ہرنائی کے بچوں کوبھی روڈوں پرنکال دیا،انہوں نےکہاں کہ بی اے پی کی اقتدارخودہچکولیاں کھارہی ہے معلوم نہیں کچھ موسمی پرندے کس حکمت کےتحت عمران خان کوسپوٹ کررہےہیں ۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.