سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر مکمل پابندی لگانے کا انتباہ

0 132

سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک پر مکمل پابندی لگانے کا انتباہ

ترجمان نے بتایا کہ اگر قومی سلامتی کا تحفظ کرنا ہی مقصد ہے تو بائیٹ ڈانس کو ٹک ٹاک سے الگ کرنا مسئلے کا حل نہیں، ایپ کی ملکیت تبدیل ہونے سے ڈیٹا تک رسائی کے حوالے سے خدشات دور نہیں ہو سکیں گے۔

امریکا کی جانب سے پہلے ہی وفاقی حکومت کے زیر استعمال ڈیوائسز میں ٹک ٹاک کے استعمال پر پابندی عائد کی ہوئی ہے مگر اب پہلی بار حکومت کی جانب سے ملک گیر پابندی کا انتباہ دیا گیا ہے۔مگر یہ اتنا آسان نہیں ہوگا کیونکہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے 2020 میں ٹک ٹاک کو قومی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئے پابندی لگانے کی کوشش کی تھی مگر عدالتوں نے انہیں روک دیا تھا۔

کمپنی کے مطابق قومی سلامتی کے حوالے سے خدشات کو دور کرنے کا بہترین حل امریکی صارفین کے ڈیٹا اور سسٹمز کو امریکا تک محدود کرنا ہے، جس کی تھرڈ پارٹی مؤثر مانیٹرنگ کی جائے۔

وکلاء کیلئے گاون پہن کر پیش ہونے کی پابندی ختم ، نوٹیفیکشن جاری
ٹک ٹاک دنیا کے مقبول ترین سوشل میڈیا نیٹ ورکس میں سے ایک ہے اور امریکا میں ہی اسے 10 کروڑ سے زیادہ افراد استعمال کرتے ہیں۔

ٹک ٹاک کے ایک ترجمان نے بتایا کہ کمپنی کو حال ہی میں معلوم ہوا تھا کہ امریکا کی جانب سے بائیٹ ڈانس سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ ایپ میں اپنے حصص کو فروخت کر دے، ورنہ امریکا میں ویڈیو شیئرنگ ایپ پر پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔

وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ کے مطابق امریکی حکومت نے ٹک ٹاک کو کہا ہے کہ اگر بائیٹ ڈانس (ٹک ٹاک کی ملکیت رکھنے والی چینی کمپنی) اس سوشل میڈیا پلیٹ فارم میں اپنے حصے کو چھوڑتی نہیں تو امریکا میں اس ایپ پر مکمل پابندی عائد کر دی جائے گی۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.