اردو ادب میں سوانح نگاری

0 280

اردو ادب میں سوانح نگاری کو بڑی اہمیت حاصل ہے۔سوانح نگاری ایک بیانیہ صنف ہے۔زندگی کے واقعات کو تاریخ اور ترتیب کے ساتھ لکھنا سوانح نگاری کہلاتا ہے۔سوانح نگاری کسی شخصیت کی زندگی کا ایک تحریری قصہ ہوتا ہے، عام طور پر اہم واقعات، کامیابیوں اور ذاتی تجربات پر توجہ مرکوز کرتا ہے۔ سوانح عمری میں جس شخص کی زندگی کے حالات لکھنامقصود ہو، اس کے مزاج اور اس کی نفسیات اور اصل فطرت کو بھی سوانح نگار سمجھنے کی کو شش کر تا ہے۔
اب آتے ہیں کہ فن سوانح نگاری کیا چیز ہے تو اسکا جواب ہے کہ فن سوانح نگاری سے مراد کسی شخص کی سوانح عمری سرگزشت یا حالات زندگی تحریر کرنا ہے۔
سوانح سانحہ کی جمع ہے ۔ سانحہ عربی زبان کا لفظ ہے جس کے لغوی معنی ظاہر ہونے والا پیش آنے والا و قوعہ اور ماجرائے ہیں ۔ عام استعمال میں ناپسندیدہ اور وحشت انگیز واقعہ کو سانحہ کہا جاتا ہے لیکن سوانح عمری اور سوانح نگاری کی اصطلاحات میں اس کےلغوی معنی کااعتبار کیا گیاہے ۔ چنانچہ سوانح عمری کا مطلب ہے
واقعات حیات حالات زندگی یا زندگی کی سرگزشت
جس میں اچھے برے نرم گرم تلخ وشیر میں ہر طرح
کے واقعات شامل ہیں۔ سوانح نگاری کو انگریزی
میں Biography کہتے ہیں۔
سوانح نگاری لکھنے میں اس شخص کے بارے میں معلومات جمع کرنا شامل ہے جس کے بارے میں آپ تحقیق، انٹرویوز، اور دستیاب وسائل جیسے کتابیں، مضامین اور دیگر متعلقہ مواد تک رسائی حاصل کر رہے ہوتے ہیں جن سے آپ مدد لے سکتے ہیں۔سوانح نگاری لکھنے میں آپ کی مدد کے لیے کچھ اقدامات مندرجہ ذیل ہیں:
اپنا موضوع منتخب کریں: ایک ایسے شخص کا انتخاب کریں جس کی زندگی کی کہانی آپ کو دلچسپ یا متاثر کن لگے۔ یہ کوئی تاریخی شخصیت ہو سکتی ہے، عوامی شخصیت ہو سکتی ہے، خاندان کا کوئی فرد ہو سکتا ہے، یا کوئی اور جسے آپ سوانح کے لائق سمجھتے ہیں۔
اسکے بعد وسیع تحقیق کریں: اس شخص کی زندگی کے بارے میں زیادہ سے زیادہ معلومات اکٹھی کریں تحقیق شروع کریں۔ اس کے پس منظر، ذاتی تجربات، کامیابیوں اور شراکت کے بارے میں بصیرت حاصل کرنے کے لیے کتابیں، مضامین اور دیگر معتبر ذرائع پڑھیں۔
اپنی تحقیق کو منظم کریں: اہم واقعات، سنگ میل اور اہم لمحات کو نمایاں کرتے ہوئے، اس شخص کی زندگی کی ایک تاریخی ٹائم لائن بنائیں۔ ابتدائی زندگی، تعلیم، کیریئر، کامیابیاں، ذاتی زندگی، اور میراث جیسے حصوں میں معلومات کو گروپ کرنے پر غور کریں،اور ترتیب وار ادوار میں مرتب کریں۔
ایک ڈھانچہ تیار کریں: جو سوانح عمری آپ لکھ رہے ہیں اسکی ساخت اور بہاؤ کا تعین کریں۔ ان اہم موضوعات یا پہلوؤں پر غور کریں جن پر آپ توجہ مرکوز کرنا چاہتے ہیں اور اسی کے مطابق اپنی سوانح عمری کا خاکہ بنائیں۔ ایک ایسا تعارف بنائیں جو قاری کی توجہ حاصل کرے اور جس شخص کے بارے میں لکھا جا رہا ہے اس کی اہمیت کو پیش کرے۔
شخصیت کے پس منظر سے شروع کریں: اس شخص کی ابتدائی زندگی، خاندانی پس منظر، اور ان کے ابتدائی سالوں کا تعارف کراتے ہوئے سوانح عمری کا آغاز کریں۔ ان کے بچپن، تعلیم، اور ان کی نشوونما کو متاثر کرنے والے کسی بھی بااثر تجربات کی وضاحت کریں۔
ان کی کامیابیوں اور شراکتوں کی تفصیل: اس شخص کی اہم کامیابیوں، قابل ذکر واقعات، اور ان کی مہارت کے شعبے، معاشرے، یا کسی دوسرے متعلقہ پہلو میں ان کی نمایاں شراکت کو نمایاں کریں۔ معاشرے میں اسکے اہم کردار کو زندہ کرنے کے لیے مخصوص مثالیں یا کہانیاں شامل کریں،اور بہترین منظر نگاری کریں ۔
ان کی ذاتی زندگی کو دریافت کریں: فرد کی ذاتی زندگی کے بارے میں بصیرت فراہم کریں، بشمول ان کے تعلقات، خاندان، دوستی، اور کسی بھی چیلنج یا ذاتی جدوجہد کا سامنا کرنا پڑا۔ اس شخص کی دلچسپیوں، مشاغل، اقدار یا ذاتی عقائد پر گفتگو کرکے اسے بہترین انسان بنائیں۔
ان کے اثرات اور میراث پر غور کریں:اس شخصیت کے مجموعی اثر، اثر و رسوخ، اور اسکی قابل قدر دیرپا میراث پر بحث کریں۔ اسکی اہمیت کا تجزیہ کریں، اور لکھیں کہ کس طرح ان کے کام یا اعمال آج بھی لوگوں کو متاثر کرتے رہتے ہیں۔
ترمیم اور نظر ثانی کریں: ابتدائی مسودے کو مکمل کرنے کے بعد، اپنی سوانح حیات کو دیکھیں، معلومات کی ہم آہنگی، وضاحت اور درستگی کی جانچ کریں۔ضرورت کے مطابق نظر ثانی اور ترمیم کریں، اس بات کو یقینی بناتے ہوئے کہ آپ کی تحریر آسانی سے پڑھی جا سکتی ہے اور اس شخص کی زندگی کا جوہر بیان کرتی ہے۔
رائے طلب کریں:اپنی سوانح نگاری کو قابل اعتماد دوستوں، ساتھیوں، یا سرپرستوں کے ساتھ شیئر کریں جو تعمیری آراء اور تجاویز فراہم کر سکیں۔ اپنی تحریر کے معیار کو بہتر بنانے کے لیے ان کی تجاویز کو شامل کریں۔
حتمی شکل دیں اور شائع کریں: ایک بار جب آپ حتمی مسودے سے مطمئن ہو جائیں تو، کسی بھی گرامر یا ٹائپوگرافیکل غلطیوں کے لیے اسے پروف ریڈ کریں۔ اپنی سوانح عمری کو ایک کتاب، ای بُک، بلاگ پوسٹ، یا دوسروں کے ساتھ زندگی کی کہانی کا اشتراک کرنے کے لیے کسی دوسرے موزوں ذریعہ کے طور پر شائع کرنے پر غور کریں۔اور لوگوں کو معلومات پہنچانے کے لئے پبلش کریں۔
یاد رکھیں، ایک سوانح عمری کسی کی زندگی کی نمائندگی کرتی ہے، اس لیے حساسیت، درستگی، اور موضوع کے احترام کے ساتھ عمل سے رجوع کرنا ضروری ہے۔اردو کی اہم سوانح نگاریوں میں یادگار غالب اور حیات جاوید ( حالی ) ، الفاروق اور سیر ۃالنبی ( شبلی ) ، سیرۃ عائشہ ( سید سلیمان ندوی)، و قار حیات (اکرام اللہ
ندوی ) ، غالب نامہ ( شیخ محمد اکرام )، محمد علی ذاتی ڈائری( عبدالماجد دریا بادی ) اور زندہ رود ( جاوید اقبال )
وغیرہ شامل ہیں

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.