چودھری سالک حسین اور پرویز الہیٰ آمنے سامنے آگئے

0 174

چودھری سالک حسین اور پرویز الہیٰ آمنے سامنے آگئے

قومی اسمبلی کے رکن چودھری سالک حسین نے کہا ہے کہ چودھری پرویز الہیٰ نے وزارت اعلیٰ کے لیے خاندان کے 2 ٹکڑے کیے۔
رکن قومی اسمبلی نے کہا کہ پچھلے 7،8 مہینے میں جو دیکھا میرا تو ملکی سیاست سے دل بھر گیا ہے اور اگر اسمبلیاں تحلیل ہو جائیں تو پنجاب میں الیکشن ہو سکتے ہیں لیکن اسمبلی تحلیل کرنے سے پرویز الہٰی اور پی ٹی آئی کا ہی نقصان ہو گا۔انہوں نے کہا کہ توشہ خانہ معاملے کے بعد عمران خان کی مقبولیت میں کمی ہوئی ہے اور اب مزید 2 تحائف ایسے آگئے ہیں جو ڈکلیئر ہی نہیں تھے۔ عمران خان سوشل میڈیا کی حد تک مقبول ضرور ہیں لیکن عمران خان کے صاف شفاف والے بیانیے کو ضرور دھچکا پہنچا ہے۔

چودھری سالک حسین نے کہا کہ عمران خان صرف اپنا معاملہ دیکھتے ہیں اور وہ صرف اپنا ہی سوچتے ہیں اور اس وقت بھی عمران خان صرف اپنا ہی سوچ رہے ہیں جبکہ پرویز الہٰی بھی اپنی اسٹریٹجی دیکھ رہے ہیں۔ سیاست میں کوئی چیز بھی حتمی نہیں ہوتی۔

انہوں نے کہا کہ مجھے اس الائنس کے اندر آگے بھی مشکلات نظر آ رہی ہیں اور مارچ اپریل میں جو ہوا اگر اس کاازالہ ہوجائے تو پھر بات چیت میں کوئی حرج نہیں۔ پرویزالہٰی آخری وقت تک اسمبلی تحلیل نہ کرنے کے لیے عمران خان کو قائل کریں گے۔

رکن قومی اسمبلی چودھری سالک حسین نے کہا کہ پنجاب اسمبلی کو بچانے کے لیے ہمیں اسٹریٹجی کی ضرورت نہیں کیونکہ پنجاب حکومت خود بھی جانا نہیں چاہتی۔ روزانہ زمان پارک جا کر قائل کیا جا رہا ہے کہ پنجاب اسمبلی کو نہ توڑا جائے۔انہوں نے کہا کہ یہی وزارت اعلیٰ کا منصب حاصل کرنے کے لیے ساری تگ و دو کی گئی اور میرا نہیں خیال کہ چودھری پرویز الہٰی اتنی جلدی جائیں گے جبکہ چودھری پرویز الہٰی نہیں چاہیں گے کہ وزارت اعلیٰ ان کے ہاتھ سے چلی جائے۔ پرویز الہٰی نے وزارت اعلیٰ کے لیے خاندان کے 2 ٹکڑے کیے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.