کیسکو کے تمام نادہندہ صارفین کے ذمہ نومبر2019تک مجموعی بقایاجات 319ارب روپے تک پہنچ گئے

0 5

کوئٹہ( این این آئی) کوئٹہ الیکٹرک سپلائی کمپنی(کیسکو)اُن تمام نادہندگان کے بجلی کنکشنز منقطع کرتی رہتی ہے جواپنے بجلی کے واجبات ادانہیں کرتے اوراُن نادہندگان کو وقتاً فوقتاً نوٹسز کے علاوہ بلوں پر بجلی منقطع کرنے کے بارے میں پیشگی اطلاع بھی دی جاتی ہے تاکہ صارفین کسی بھی ممکنہ زحمت سے بچنے کے لئے اپنے بلوںکی ادائیگی کو ممکن بناسکیں لیکن تا حال عادی نا دہندگان کی جا نب سے کوئی مثبت پیش رفت سامنے نہ آنے کی وجہ سے کمپنی کے لئے مالی مشکالات میں اضافہ ہوتاجارہاہے جس کی وجہ سے کیسکو اُن تمام سرکاری، نجی، گھریلو، کمرشل، انڈسٹریل اور زرعی صارفین کو نوٹسز کی صورت میں بل جمع کرانے کے لئے اپیل کرتی ہے جس کے بعد بل جمع نہ کرانے کی صور ت میں کیسکوبلاتفریق اُن کے بجلی کے کنکشنز منقطع کرے گی ۔نومبر2019ء تک کیسکوکے تمام نادہندہ صارفین کے ذمہ مجموعی تمام بقایاجات 319ارب روپے تک پہنچ گئے ہیں اورانہی رقم میں سے زرعی صارفین کے ذمہ 242ارب روپے ، صوبائی حکومت کے ذیلی محکموںکے ذمہ 19ارب روپے، وفاقی حکومت کے ذیلی محکموںکے زمہ ڈیڑھ ارب روپے جبکہ دیگرصارفین (گھریلو، کمرشل اورصنعتی) کے ذمہ تقریباً 16ارب روپے کے بقایاجات واجب الاداہے۔ نومبر2019ء کے بلوںکی مدمیں صوبائی محکموںکی جانب سے بجلی کے بل جمع کرنے کی شرح صرف گیارہ فیصد(11%)رہی جبکہ وفاقی حکومت کے ذیلی محکموںکی طرف سے نومبرمیں بلوںکی جمع کرنے کی شرح بائون فیصد(52%)، گھریلو کمرشل اور صنعتی صارفین کی جانب سے بلوںکی شرح اسی فیصد(80%)جبکہ زرعی صارفین کی جانب سے ماہ نومبرمیں بلوںکی جمع کرنے کی شرح صرف تین فیصد) (3%رہی ۔ صوبائی حکومت کے وہ تمام ذیلی محکمے جو کیسکوکے نا دہندہ ہیںاُن میںپبلک ہیلتھ انجینئرنگ 7132ملین روپے ، محکمہ تعلیم کے ذمہ5312ملین روپے، بلوچستان پولیس تقریباً768ملین روپے ،لوکل گورنمنٹ اینڈرورل ڈیولپمنٹ کے ذمہ307ملین روپے ، کمیونیکشن اینڈورکس ڈیپارٹمنٹ241ملین روپے، بلوچستان کمشنرز181ملین روپے، ڈپٹی کمشنرزبلوچستان651ملین روپے، محکمہ خزانہ تقریباً24ملین روپے، محکمہ جیل 67ملین روپے، ایگریکلچر ڈیپارٹمنٹ تقریباً255ملین روپے، بلوچستان فوڈ ڈیپارٹمنٹ64ملین روپے،، فشریز ڈیپارٹمنٹ73ملین روپے، محکمہ ایری گیشن کے ذمہ 99ملین روپے، لائیواسٹاک ڈیپارٹمنٹ62ملین روپے،بلوچستان بلڈنگ کے ذمہ 111ملین روپے، ، سوشل ویلفیئرڈیپارٹمنٹ90ملین روپے، بلوچستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی 19ملین روپے ، انڈسٹریز کے ذمہ 26ملین روپے ، ویٹرینری کے ذمہ 36ملین روپے ،پاپولیشن پلاننگ کے ذمہ 32ملین روپے، محکمہ صحت1998ملین روپے ،محکمہ سوشل ویلفیئر90ملین روپے، کیو ڈی اے کے ذمہ13ملین روپے، محکمہ واسا کے ذمہ تقریباً495ملین روپے ،لوکل باڈیز کے 812ملین روپے ،گوادرڈیوپلمنٹ اتھارٹی تقریباً 10ملین روپے کے بقایاجات واجب الاداہیں۔وفاقی محکموںکے ذمہ بھی کیسکوکے بجلی واجبات بقایاجات ہیںاُن میں پاکستان پوسٹ آفسز کے ذمہ 124ملین روپے،پاکستان ٹیلی کمیونکیشن کارپوریشن 110ملین روپے، الیکشن کمشنر 14ملین روپے، سینٹرل ایکسائز لینڈکسٹم کے ذمہ57ملین روپے ،ڈی جی رجسٹریشن نادار 38ملین روپے، پلانٹ پروٹیکشن تقریبا16ملین روپے، سوئی ناردرن گیس کمپنی کے ذمہ 5ملین روپے ، سوئی سدرن گیس کمپنی کے ذمہ26ملین روپے، نیشنل بینک آف پاکستان15ملین روپے،بلوچستان یونیورسٹی کے ذمہ 11ملین روپے، این ٹی سی کے ذمہ 9ملین روپے، گوادرپورٹ اتھارٹی کے ذمہ11ملین روپے،پاکستان ریلوے کے ذمہ 7ملین روپے ، میٹرولوجیکل ڈیپارٹمنٹ کے ذمہ تقریباً13ملین روپے، محکمہ آرکیالوجی کے ذمہ 12ملین روپے ،نیشنل ہائی و ے اتھارٹی کے ذمہ تقریبا4ملین روپے کے بقایاجات واجب الادا ہیں۔کیسکو اپنے تمام نادہندہ سرکاری ، گھریلو، کمرشل، صنعتی اور زرعی صارفین سے اپیل کر تی ہے کہ وہ بجلی کے منقطع ہونے کی زحمت اور پریشانی سے بچنے کے لئے اپنے بل مقررہ وقت پر اداکرنے کے ساتھ ساتھ تمام واجب الادابقایاجات بھی فوری طورپرجمع کرادیں۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.