جے یوآئی کوئٹہ کی امدادی سرگرمیاں

0 62

پاکستان میں سیلاب کے طوفان نے جو تباہی مچائی ہے ،اس کا صحیح اندازہ لگانا مشکل ہے اس سے نمٹنے کیلئے سرکاری وغیر سرکاری طور پر مختلف محکموں اور تنظیموں کی جانب سے بحالی اور ریلیف فراہم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ لیکن پاکستان میں دینی جماعتوں اور مدارس کے زیر انتظام چلنے والے رفاحی اداروں نے سیلاب متاثرین کو ریسکیو کرنے اور بعد ازاں ان کی بحالی کے لیے جو کردار ادا کیا وہ قابل رشک ہے۔ اس سلسلے میں جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ بلوچستان میں
واحد سیاسی جماعت ہے جنہوں نے ضلعی امیر مولانا عبد الرحمن رفیق کی قیادت میں ضلعی مجلس عاملہ کے اراکین کے ہمراہ انتہائی منظم انداز میں سیلاب کے پہلے مرحلے اور دوسرے مرحلے کے دوران دن رات ایک کرکے مسلسل عوام اور انتظامیہ کے درمیان رابطے میں رہ کر قابل فخر کردار ادا کیا ، مختلف علاقوں کے متاثرین کو
سروے میں شامل کراکر انہیں ریلیف کا حصہ بنایا اور سرکاری سطح پر ان متاثرین کو راشن خیمے، ٹینٹ وغیرہ مل گئے، اس پورے مرحلے کو واچ کرنے اور متاثرین کو فوری ریلیف پہنچانے کے لیے جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ نے وزیر اعلیٰ بلوچستان ، چیف سیکرٹری ، کمشنر ڈپٹی کمشنر پی ڈی ایم اے حکام سے کئی بار ملاقاتیں کیں اور ان کے ساتھ مل کر کمیٹیاں تشکیل دیں بحالی کےعمل میں بھرپور ساتھ دیا، اس سلسلے میں جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ کی مجلس عاملہ کے دواہم دونشستوں پر مشتمل اجلاس زیر صدارت ضلعی امیر مولانا عبد الرحمن رفیق وسنئیر نائب امیر مولانا خورشید احمد منعقد ہوئے جس میں سیلاب سے متاثرہ کوئٹہ کے تمام علاقوں میں جاری سروے کا جائزہ لیا گیا اور اراکین نے اپنی آرائ و تجاویز اور تحفظات کا اظہار کیا، سیلاب متاثرین کے حوالے سے جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ کی جانب سے قائم کی گئی کمیٹیوں نے صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ ملاقاتوں اور متاثرین کو شفاف طریقے سے سروے میں شامل کرانے کے حوالے سے تفصیلی گفتگو ہوئی، اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی امیر مولانا عبد الرحمن رفیق مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل وضلعی سرپرست مولانا مفتی محمد روزی خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیلاب سے کوئٹہ زیادہ متاثر ہوا ہے، صحیح تباہی کی رپورٹ اب تک سامنے نہیں آئی ہے، گنجان آبادی کے اکثر گھر بہہ گئے، بہت سارے پل ٹوٹ چکے ہیں، اس سلسلے میں سیاست سے بالاتر ہوکر خالص انسانی بنیادوں پرسروے چاہتے ہیں، بعض مقامات پر پیش ہونے والی شکایات کو نوٹ کیا گیا،جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ کے زیر اہتمام سیلاب متاثرین میں نقدرقوم تقسیم کی تقریب کا انعقاد، سینکڑوں خاندانوں میں نقد رقوم تقسیم کی گئیں، اس سلسلے میں دوسرے مرحلے کی عظیم الشان تقریب جامعہ قاسم العلوم کلی شابو میں منعقد ہوئی جس میں سینکڑوں افراد میں ضلعی امیر مولانا عبد الرحمن رفیق ضلعی جنرل سیکرٹری حاجی بشیر احمد کاکڑ حاجی عنایت اللہ بازئی حافظ مسعود احمد حاجی قاسم خان خلجی مولانا حافظ سردار محمد نورزئی حافظ سراج الدین مولانا جمال الدین حقانی مولانا مفتی نیک محمد فاروقی حاجی صالح محمد مفتی رحمت اللہ اور دیگر نے نقدرقوم تقسیم کئے، ضلع امیر مولانا عبد الرحمن رفیق نے تقریب تقسیم نقد رقوم برائے سیلاب متاثرین سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ جمعیت اپنی مدد آپ کے متاثرین کے ساتھ تعاون کررہی ہے، جمعیت کے کارکنان خدمت انسانیت کو فروغ دے کر زیادہ سے زیادہ تعاون کو شعار بنائیں، بلا تفریق پوری انسانیت کی خدمت ہمارا نصب العین ہے ، انہوں نے کہا کہ انسا نوں سے پیار و محبت اور ضرورت مند انسا نوں کی مددکے عمل کو ہر دین اور مذہب میں تحسین کی نظر سے دیکھا جا تا ہے لیکن دین اسلام نے خد مت ِ انسا نیت کو بہترین اخلا ق اور عظیم عبا دت قرار دیا ہے۔اللہ تعالیٰ نے انسا نوں کو یکساں صلا حیتوںاور اوصاف سے نہیں نوازا بلکہ ا±ن کے درمیان فرق وتفا وت رکھا ہے اور یہی فرق و تفاوت اس کا ئنات رنگ وبو کا حسن و جما ل ہے، وہ رب چاہتا تو ہر ایک کو خوبصوت ،مال دار،اور صحت یاب پیدا کر دیتا لیکن یہ یک رنگی تواس کی شانِ خلاقی کے خلاف ہوتی اور جس امتحان کی خاطر انسان کو پیدا کیا ہے، شاید اس امتحان کا
مقصد بھی فوت ہو جاتا۔ا±س علیم و حکیم رب نے جس کو بہت کچھ دیا ہے ا±سکا بھی امتحان ہے اور جسے محروم رکھا ہے اس کا بھی امتحان ہے۔وہ رب اس بات کو پسند کرتا ہے کہ معا شرے کے ضرورت مند اور مستحق افراد کی مدد کریں جن کو اللہ نے اپنے فضل سے نوازا ہے تاکہ انسانوں کے درمیان باہمی الفت ومحبت کے رشتے بھی استوار ہوں اور دینے والوں کو اللہ کی رضا اور گناہوں کی بخشش بھی حاصل ہو۔ تقریب میں صوبائی جوائنٹ سیکرٹری مولانا خورشید احمد سیکرٹری اطلاعات عبدالغنی شہزاد بھی شریک ہوئے۔اس سے قبل جمعیت علمائ اسلام ضلع کوئٹہ کے امیر مولانا عبد الرحمن رفیق نے بھوسہ منڈی اور مختلف مقامات پر اپنی جانب سے سیلاب متاثرین میں امدادی سامان تقسیم کیا، اور مختلف علاقوں میں جاکر مالی اور جانی نقصان کا جائزہ لیا، انہوں نے متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے ان کے پاس جاکر مالی معاونت کی، ریلیف کی فراہمی کے سلسلے میں مختلف مقامات پر خطاب کرتے ہوئے ضلعی امیر مولانا عبد الرحمن رفیق نے کہا کہ ہم مصیبت زدوں کے غم اور درد میں برابر کے شریک ہیں ،قائد جمعیت مولانا فضل الرحمن کے حکم پر اپنی مدد آپ کے تحت متاثرین کی خدمت کا سلسلہ جاری رکھا ہے ، مشکل کی اس گھڑی میں سیاست
نہیں کرتے تمام تر توجہ عوام کی خدمت پر مرکوز ہے ، اس سلسلے میں ہم نے تمام کارکنوں کو بھی ہدایات دی ہیں کہ وہ عوام سیلاب متاثرین کی ہرممکن مدد کیلئے گھروں سے نکل ملی اسلامی فریضہ ادا کریں۔ روز اول سے متاثرین کے ساتھ کھڑے ہوکر یہ ثابت کیا کہ جمعیت علمائ اسلام عوام کو تنہائ چھوڑ نہیں سکتی حالانکہ صوبائی حکومت کی جانب سے عوام کو ریلیف کی فراہمی میں یکسر ناکامی نظر آرہی ہے کوئٹہ کچلاک پنجپائی کے عوام کیلئے صوبائی حکومت اور ان کے نمائندوں نے کچھ نہیں کیا ہے۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.