قاتل کرونا، غربت،لاک ڈاون،ہمارا میڈیا

0 4

تحریر۔حسیب آرائیں
مانا کہ کرونا اک مہلک بیماری ہے مگر غربت سے کم ہی خطرناک ہو گی کرونا کا علاج ہو رہا ہے ہزاروں مریض صحت ےاب ہو گے ہیں مگر غربت وہ بیماری ہے صدیوں سے جس کا علاج دریافت نا ہو سکا جسطرح کرونا سے بچا¶ لازمی ہے اس ہی طرح غربت کے خلاف غریب کی جنگ بھی لازم ہے
جب حکومت وقت کی جانب سے پہلے لاک ڈاون کیا تھا تو کیا شرعی اصولوں کے مطابق غریب دیاری دار کی روزی روٹی کا بندوبست کیا گیا تھا؟؟؟ مانتا ہوں میڈیکل سٹور کھلے تھے مگر کیا اک مزدور کے پاس دوائی لینے کے پیسے بنا روز گار کے موجود تھے؟؟؟
کیا اس طویل لاک ڈاون میں حکومت نے کسی سے پانی تلک کا پوچھا؟؟؟ ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پر دم نکلے الٹا غریب کو دوکاندار کو دبایا گیا مظلوم تاجروں پر fir درج ہوتی رہی تاجروں کا جرم صرف رزق حلال کا کاروبار تھا
لاک ڈاون میں سکول بند ہونے کے باوجود عدالتی حکم کے باوجود نجی سکول تیز چھڑی سے فیس وصول کررتے رہے حکومتی ملازم بنا کچھ کیے تنخواہیں لیتے رہے مگر سب میں پسنے والا مظلوم طبقا تاجروں کا تھا تاجر اور کاروبار ملکی معشیت میں ریڑ کی ہڈی سی مثال رکھتی ہے مگر پھر بھی اسکو روندھا گیا جسکے نتیجے میں تاجر اور کاروبار تباہ ہوگیا
اب پھر کچھ خبریں گردش کر رہی ہیں کہ سکول بند ہوں گے شادی حال بند ہوں گے مطلب آہستہ آہستہ نشانے پر کاروباربھی آسکتا ہے کیونکہ پہلے بھی سکول شادی حال پھر مارکیٹیں بند ہوئی تھی
ہم لاک ڈاون کے خلاف نہیں مگر اس بار لاک ڈاون میں سب کو برابری کے حقوق ملنے چاہیے کہنے کا مطلب ہے کہ سول و عسکری سب اداروں کی بشمول پارلیمنٹ ارکان سب کی تنخواہیںبند کی جائیں خاص طور پر ان اینکر پرسن کی جو لاکھوں روپے تنخوا لینے کے بعد 500 روپے دیاری کمانے والے کے خلاف لاک ڈاون کی بات کرتے ہےں معشیت تباہ ہو رہی ہے مگر سب کرونے کے پیچھے پڑئے ہےں
جب چپڑاسی سے لیکر وزیراعظم تلک لاک ڈاون کی تنخواہیں نا ملی تو امید ہے حالات جلد سدھر جائیں گے اور شاید پھر کرونا بھی واپس چلا جائے
برئے بڑئے جلسے ہورئے ہےں sop کا وہاں کسی کو خیال نہےں نا ماسک کا نا سوشل ڈسٹنس کا نا کرونا کا بس کرونا جو نظر آرہا ہے ےا سکولوں مےں ےا پھر جائے کاروبار مےں آخر اس طرح کب تک چلتا رہے گا معشیت کے دور دارز اثرات مرتب ہوگے جو کہ نہایت سگین ہوں گے کیونکہ پہلے لاک ڈاون کے اثرات کاروباری دنیا مےں آب تک موجود ہےں کچھ قرضے اب تک وباال جان بنے ہوئے ہےں
اک اندازئے کے مطابق پہلے لاک ڈاون مےں کم ازکم ایک کڑوڑ لوگ بے روزگار ہوئے لوگوں کے ہنستے بستے گھر اُجڑ گے مگر ہمارئے اینکر پرسن ہمارا میڈےا لاک ڈاون کی تعریفوں پر تعریفیں کرتے رہے کبھی گرم کمروں مےں اور کبھی ایر کینڈیشن رومز مےں بیٹھ کر کبھی کسی نے غریب کے حق مےں بات نا کی سرکاری ملازم کو گھر بیٹھے جب فل مرات ملےں گی تو وہ تو لاک ڈاون کے حق مےں ہی ہوگا
اگر اب کے لاک ڈاون ہوا تواس بار چکی مےں گندم کی بجائے عوام پیسے گی پچھلی بار صرف قرضہ چڑھا تھا اس بار نا جانے کہےں کپڑئے بھی نا گروی رکھنے پڑھ جائےں
دکھا دﺅں گا اوقات کسی روز زمانے کے خدا¶ں کو۔شاہوں کی مخالفت کا میں بچپن سے عادی ہوں۔اک اندازئے کے مطابق پہلے لاک ڈاون مےں کم ازکم ایک کڑوڑ لوگ بے روزگار ہوئے لوگوں کے ہنستے بستے گھر اُجڑ گے مگر ہمارئے اینکر پرسن ہمارا میڈےا لاک ڈاون کی تعریفوں پر تعریفیں کرتے رہے کبھی گرم کمروں مےں اور کبھی ایر کینڈیشن رومز مےں بیٹھ کر کبھی کسی نے غریب کے حق مےں بات نا کی سرکاری ملازم کو گھر بیٹھے جب فل مرات ملےں گی تو وہ تو لاک ڈاون کے حق مےں ہی ہوگا

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.