مشرف غداری کیس کا فیصلہ محفوظ کرنے کے خلاف درخواست قابل سماعت قرار، وفاقی حکومت کو نوٹس جاری

0 132

لاہور:  لاہور ہائیکورٹ نے سابق صدر پرویز مشرف کی خصوصی عدالت کے فیصلہ کو محفوظ کرنے کے خلاف درخواست قابل سماعت قرار دیتے ہوئے وفاقی حکومت کو 28 نومبر کے لیے نوٹس جاری کردیے۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے سابق صدر پرویز مشرف کی درخواست پر بطور اعتراض کیس سماعت کی، سابق صدر کے وکیل خواجہ طارق رحیم عدالت میں پیش ہوئے اور عدالت کو بتایا کہ جب پرویز مشرف پاکستان آئیں گے تو جس شہر میں اتریں سب سے پہلے ٹربیونل کے فیصلے کا سامنا کریں گے، عدالت کو مزید بتایا گیا کہ ٹربیونل یا خصوصی عدالت خود ہی غیر قانونی ہے۔عدالت نے ریماکس دیتے ہوئے کہا کہ بد قسمتی سے اس ملک میں ہر چیز میں ڈائنامکس بدلتے ہیں، آپ کی ساری باتیں ٹھیک ہیں مگر یہ عدالت کیسے سماعت کر سکتی ہے۔سابق صدر کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے درخواست پر عائد اعتراضات ختم کرتے ہوئے درخواست کو قابل سماعت قرار دیدیا، عدالت نے وزارت قانون و انصاف سے خصوصی عدالت کی تشکیل اور سمری بھی طلب کرلی جب کہ معاونت کے لیے اٹارنی جنرل کو بھی طلب کرلیا۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.