بھارت، نئی پارلیمنٹ کے40فیصد سے زائد ارکان کو قتل اور ریپ سمیت مختلف جرائم پر مقدموں کا سامنا

0 1

نئی دہلی  بھارت میں انتخابات کے بعد وجود میں آنے والی نئی پارلیمنٹ کے 40 فیصد سے زائد ارکان کو قتل اور ریپ سمیت مختلف جرائم پر مقدموں کا سامنا ہے۔انتخابی اصلاحات کے گروپ ایسوسی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمز (اے ڈی آر)کے مطابق، اپوزیشن کی مرکزی جماعت کانگریس کے ایک رکن پارلیمنٹ کو قتل عام اور ڈکیتی سمیت 204 مقدموں کا سامنا ہے، جیتنے والے 543 نو منتخب ارکان اسمبلی میں سے کم از کم 233 پر مقدمے چل رہے ہیں۔اے ڈی آر کے الیکشن چیف انیل ورما نے اس پریشان کن رجحان کو جمہوریت کے لیے خطرناک قرار دیا ہے۔گروپ نے 539 کامیاب ارکان اسمبلی کے ریکارڈ چیک کرنے کے بعد کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی بھارتیہ جنتا پارٹی کے 303 نو منتخب ارکان میں سے 116 کے خلاف مقدمے چل رہے ہیں۔اسی طرح، کانگریس کے 52 میں سے 29 کو مقدمات کا سامنا ہے۔اے ڈی آر کے مطابق گذشتہ ایک دہائی کے دوران اراکین پارلیمنٹ کے خلاف سنگین نوعیت کے مقدمات میں دگنا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، جن میں 11 قتل، تین ریپ اور 30 قتل عام کے مقدمات شامل ہیں۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.