کچھی بالاناڑی کے گاؤں کولاچی میں وبائی ا مراض حملہ آ ور ہو نے سے ایک شخص کی جان چلی گئی ہے، مہراللہ کولاچی و دیگر کی پریس کانفرنس

0 183

ڈھاڈر نمائندہ خصوصی ۔
کچھی بالاناڑی کے گاؤں کولاچی میں وبائی ا مراض حملہ آ ور ہو نے سے ایک شخص کی جان چلی گئی طبی سہولیات نہ ہونے کے باوجود ہم اپنی اور مخیر حضرات اور مقامی معززین کی مدد سے ادویات بازار سے خرید کر علاقے کے لوگوں کا علاج معالجہ کروارہے ہیں ہیں ایک ماہ ہوچکا ہے محکمہ صحت کچھی کی جانب سے اب تک کوئی اقدام نہیں اٹھایا جارہا نہ ہی ادویات فراہم کی گئی گاؤں میں ملیریا، ٹائیفائڈ اور گیسڑو کی وباء شدت سے پھیل رہی ہے
چیف سیکرٹری بلوچستان ڈپٹی کمشنر کچھی سخت نوٹس لیں مہراللہ کولاچی
یہ بات ضلع کچھی تحصیل بالاناڑی کے گاؤں کولاچی کے معتبر شخصیت مہراللہ کولاچی، وڈیرہ محمد مراد کولاچی، رجب کولاچی اور محمد اسماعیل کولاچی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ بارشوں اور سیلاب نے مذکورہ گنجان آباد گاؤں جو کہ مٹھڑی کے قریب نیشنل ہائی وے سے چند فرلانگ کے فاصلے پر واقع ہے کو مکمل صحفہ ہستی سے مٹ چکا ہے سیلاب سے ہمارے مکانات فصلوں اور مال مویشی کو بہت بڑا نقصان پہنچا ہے ایک ماہ سے زیاد ہونے والا اب تک صوبائی حکومت اور پی ڈی ایم اے نے ہمارے گاؤں کولاچی میں کوئی اقدامات نہیں کئے ہیں گاؤں کے کئی خاندانوں نے مجبور ہو کر نقل مکانی کر لی باقی لوگ آ ج بھی حکومتی اداروں کی مدد کے منتظر ہیں ضلعی انتظامیہ کچھی نے محدود وسائل میں رہ کر گاؤں کولاچی میں محدود پیمانے پر خوراک اور راشن فراہم کیا جو انتہائی ضرورت سے کم تھا انہوں نے کہا گاؤں میں سیلاب کا پانی کھڑے ہونے کی وجہ سے مچھر مکھیوں کی بھرمار ہے جس سے مختلف وبائی امراض پھیل رہے ہیں محکمہ صحت کچھی سے کئ بار رابط کر چکے ہیں لیکن محکمہ صحت کی جانب سے کوئی شنوائی نہیں ہوئی ہے جبکہ ہمارے بچے بوڑھے جوان اور خواتین روز بروز مختلف امراض میں مبتلا ہو رہی ہیں آج بھی گاؤں میں وبائی امرض سے ایک شخص غلام یسین زندگی کی بازی ہار چکا ہے وبائی امراض کے علاج معالجے کے لیے گاؤں کے لوگ غربت کے باوجود سبی بازار سے ادویات خرید کر اپنی مدد آپ کے تحت ایک میڈیکل کیمپ قائم کیا ہوا ہے جو ایک ڈسپنسر کی مدد سے علاقے کے لوگوں کا علاج معالجہ کروا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اگر فوری طور پر یہاں علاج معالجہ کی سہولت اور ادویات فراہم نہ کی گئیں تو صورتحال سنگین ہو سکتی ہے انہوں نے چیف سیکرٹری بلوچستان سیکرٹری صحت اور ڈپٹی کمشنر کچھی عمران ابراہیم بنگلزئی سے اپیل کی کہ وہ ہمارے لوگوں کی زندگی بچانے کے لیے اقدامات کریں اور محکمہ صحت کواس سے متعلق سخت ہدایات جاری کی جائیں

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.